رسول اللہ کا وہ خط مبارک جو آپﷺ نے روم کے حکمران کولکھا ،آپ بھی دیکھ کرسعادت حاصل کریں اور جانئے سرکار دوجہاںﷺ نے اسے کیاپیغام دیا تھا

رسول اللہ کا وہ خط مبارک جو آپﷺ نے روم کے حکمران کولکھا ،آپ بھی دیکھ کرسعادت حاصل کریں اور جانئے سرکار دوجہاںﷺ نے اسے کیاپیغام دیا تھا

اللہ کے حبیب حضرت محمد مصطفیٰﷺ نے مختلف خطوں میں اپنے وفود و سفیر بھجے تھے جو آپﷺ کے دعوتی خطوط لیکر وہاں کے حکمرانوں کے پاس پہنچے ۔آپﷺ نے انہیں اسلام کی دعوت دی ۔سرکار دوجہاں ﷺ نے ایک خط روم کے حکمران ہرقل کے نام بھی لکھوایا ،اس نامہ گرامی کی عبارت کیا تھی اور اسکا خط کیا تھا ؟ یہ نوادرات عالم میں سب سے عظیم خط ہے ۔اٹلس فتوحات اسلامیہ میں یہ خط شامل ہے جس میں اسکا عکسی نمونہ مسلمانوں کے ایمان و عقیدت کو روشن اور ٹھنڈا کرتا ہے ، وہ اپنی آنکھوں سے اپنے پیارے نبیﷺ کی لکھوائی عبارت او مہر مبارک کو دیکھ سکتے ہیں۔آپﷺ نے ہرقل کو لکھا تھا ،

’’اللہ کے نام سے (شروع )کرتا ہوں جو نہایت مہربان بہت رحم کرنے والا ہے۔
اللہ کے بندے اور اس کے رسول محمد (ﷺ) کی طرف سے رومی حکمران ہر قل کے نام جو ہدایت کی پیروی کرے اس پر سلام ہو! اما بعد :

پس میں تمہیں اسلام کی دعوت دیتا ہوں۔ تم اسلام قبول کر لو، سلامت رہو گے۔ اللہ تمہیں دوہر اجر دے گا ، پھر اگر تم نے حق سے منہ موڑ ا تو ان کاشتکاروں (شام و مصر وغیرہ کے عیسائیوں ) کی گمراہی کا بوجھ تمہی پر ہو گا۔ اور (قرآن مجید میں ارشاد باری ہے ):

’’اے اہل کتاب ! ایک کلمے کی طر ف آو جو ہمارے اور تمہارے درمیان مشترک ہے ، یہ کہ ہم اللہ کے سوا کسی کی عبادت نہ کریں اور اس کے ساتھ کسی کو شریک نہ ٹھہرائیں اور ہم میں سے کوئی اللہ کو چھوڑ کر اور وں کوپروردگار نہ ٹھہرائے ، پھر اگر وہ (حق سے ) منہ موڑیں تو تم کہہ دو : اس بات کے گواہ رہو کہ بے شک ہم مسلمان ہیں۔‘‘(ال عمران )